Kamaal Krty ho| Poetry By Yasir Saleem | HD | 2019


یہ جو بے رخی کرتے ہو تم کمال کرتے ہو یہ جو بے رخی کرتے ہو تم کمال کرتے ہو محفل میں یوں بد نام کرتے ہو کمال کرتے ہو میں نے کہا تھا تمہاری خاطر جان دے سکتا ہوں میں نے کہا تھا تمہاری خاطر جان دے سکتا ہوں تم تو سچ سمجھ لیتے ہو کمال کرتے ہو دل میں ملنے کا خیال آیا تو تم سے اظہار کر بیٹھے دل میں ملنے کا خیال آیا تو تم سے اظہار کر بیٹھے تم گھر کا راستہ ہی غلط بتاتے ہو کمال کرتے ہو اتنا ظلم و قہر اچھا نہیں میری جان نا تواں پر اتنا ظلم و قہر اچھا نہیں میری جان نا تواں پر تم تو چھوڑ کے چلے جاتے ہو کمال کرتے ہو تمھاری آنکھیں مجھے دیکھنے کا ارمان کرتی ہوں گی یہ پتا ہے مجھے تمھاری آنکھیں مجھے دیکھنے کا ارمان کرتی ہوں گی یہ پتا ہے مجھے سامنے آ کر نظریں ہی جھکا لیتے ہو کمال کرتے ہو

3 thoughts on “Kamaal Krty ho| Poetry By Yasir Saleem | HD | 2019

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *